میر شکیل الرحمٰن کی گرفتاری کیخلاف کئی شہروں میں احتجاج

جنگ گروپ اور جیو کے ایڈیٹر انچیف میر شکیل الرحمٰن کی گرفتاری کے خلاف ملک کے مختلف شہروں میں احتجاج کا سلسلہ آج بھی جاری رہا۔

کراچی میں جنگ بلڈنگ کے سامنے احتجاج کیا گیا، جس میں انٹرنیشنل پیس آرگنائزیشن کے جاوید یوسف اور ناصر سیموئل نے شرکت کی۔

جاوید یوسف نے کہا کہ اندھیرا راستہ روشن کرنے والوں کیلئے ہمیشہ مشکلات آتی ہیں۔

ناصر سیموئل نے مظاہرین سے خطاب میں کہا کہ مسیحی برادری نے ہمیشہ سچ اور حق کی حمایت کی ہے، میر شکیل الرحمٰن کی گرفتاری آزادی صحافت پر حملہ ہے۔

مظاہرین سے سینئر صحافی شکیل یامین کانگا، رانا یوسف، سعید الدین پاشا، دارا ظفر سمیت دیگر نے صحافیوں نے بھی خطاب کیا۔

راولپنڈی میں جنگ بلڈنگ کے باہر احتجاج کیا گیا، جس میں سینئر صحافی اور سول سوسائٹی کے نمائندوں نے شرکت کی۔

سینئر صحافی آصف علی بھٹی، امجد عباسی، حنیف خالد، منیر شاہ، ناصر چشتی، ناصر زیدی، رانا غلام قادر سمیت دیگر صحافیوں کا کہنا تھا کہ جنگ ورکرز کی جدوجہد سے ہی میر شکیل الرحمٰن آزاد ہوں گے۔

لاہور میں ڈیوس روڈ پر جاری احتجاجی کیمپ میں سینئر صحافیوں نے شرکت کی، ان کا کہنا تھا کہ کئی ماہ گزرنے کے باوجود میر شکیل الرحمٰن پر کوئی الزام ثابت نہیں کیا جاسکا، انہیں فوری طور پر رہا کیا جائے۔

کوئٹہ میں جنگ بلڈنگ کے باہر احتجاج میں جیو نیوز کے کارکنان شریک ہوئے، مظاہرین نے کہا کہ میر شکیل الرحمٰن کی گرفتاری کے خلاف احتجاج جاری رہے گا۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی اطلاعات و نشریات کے اجلاس میں سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ جنگ جیو کے ایڈیٹرانچیف کو حکومتی حراست میں 6 ماہ ہوگئے لیکن کوئی الزام ثابت نہیں ہوا۔

انہوں نے استفسار کیا کہ میر شکیل الرحمٰن مقدمہ میں بری ہوگئے تو چھ ماہ کی حراست کا حساب کون دے گا؟

سیالکوٹ میں الیکٹرانک میڈیا ایسوسی ایش نے احتجاج کیا، مظاہرے میں ن لیگ اور سول سوسائٹی کے کارکنان نے بھی شرکت کی۔

صدر الیکٹرانک میڈیا ایسوسی ایشن مبین قمر ملک نے کہا کہ میر شکیل الرحمٰن کی گرفتاری آزادی صحافت کا گلا گھونٹنے کے مترادف ہے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما فاروق گھمن نے میر شکیل الرحمٰن کی گرفتاری کی شدید مذمت کی۔

میرپور خاص میں پریس کلب کے سامنے پیپلز پارٹی نے مظاہرہ کیا، مظاہرین نے میر شکیل الرحمٰن کی گرفتاری کی مذمت کی، بہاولپور اور نوابشاہ میں بھی صحافیوں نے احتجاج کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے